کرفیوکا 120 واں روز

مقبوضہ کشمیر میں آج ایک 120ویں روز بھی صورتحال معمول پر نہ آسکی۔ وادی میں کرفیو تاحال برقرار ہے۔ دکانیں، اسکول اور کاروبار مکمل طور پر بند ہیں۔ سڑکیں ویران ہیں جبکہ مسلسل کرفیو کے باعث خوراک اور ادویات کی شدید قلت کے باعث قحط کی صورتحال کا سامنا ہے۔ بھارتی فوج نے مقبوضہ وادی کے مختلف اضلاع میں چھاپہ مار کارروائیاں کر کے متعدد کشمیری نوجوانوں کو حراست میں لے لیا۔چادر و چار دیواری کا تقدس پامال کرتے ہوئے خواتین سے بدتمیزی بھی کی اور گھروں میں توڑ پھوڑ بھی۔ہزاروں کشمیریوں نے کرفیو اور پابندیوں کے باوجود بھارت مخالف ریلیاں نکالیں اور بھارتی مظالم کے خلاف سخت احتجاج کیا جس میں خواتین کی بھی بڑی تعداد شریک تھی۔حریت رہنماؤں کی اپیل پر بھارتی مظالم کے خلاف وادی بھر میں آزادی مارچ کیا جائے گا۔ حریت رہنماؤں نے بھارتی جارحیت کی شدید مذمت کرتے ہوئے ہڑتال کی کال میں دس نومبر تک توسیع کردی ہے۔

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.