راکٹ حملے میں 38 شہری ہلاک

غیر ملکی خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق شام میں انسانی حقوق کے حوالے سے کام کرنے والی برطانیہ کے مانیٹرنگ گروپ کا کہنا تھا کہ راکٹ حملے دو روز سے جاری تھے اور ہلاک ہونے والوں میں 14 بچے بھی شامل ہیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ حکومت مخالف گروپ کی جانب سے کی جانے والی شدید بمباری سے 250 شہری زخمی بھی ہوئے ہیں۔مانیٹرنگ گروپ کے سربراہ رامی عبدالرحمٰن نے بتایا کہ جنگجوؤں کی جانب سے شہر کے مغربی اضلاع اور مغربی کناروں پر سیکٹروں راکٹ فائر کئے گئے۔گذشتہ 3 ماہ سے حکومتی فوج اور ان کی اتحادی فورسز نے حلب کو جنگجوؤں اور دیگر عسکریت پسند گروپوں سے چھڑوانے کیلئے بڑی کارروائی کا آغاز کررکھا ہے تاہم انھیں تقریبا 1500 سے زائد جنگجوؤں کی جانب سے جارحانہ رد عمل کا سامنا ہے۔مانیٹرنگ گروپ کا دعویٰ ہے کہ جمعے سے جاری شدید لڑائی میں اب تک فوج اور ان کے اتحادیوں کے 30 اہلکار ہلاک جبکہ 50 شامی جنگجوؤں بھی ہلاک ہوئے ہیں۔

شام کے دوسرے اہم شہر حلب میں فورسز سے جھڑپوں کے دوران جنگجوؤں کے راکٹ شہری آبادی پر گرگئے جس کے نتیجے میں 38 شہری ہلاک ہوگئے۔

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.