امریکی سنٹرل کمانڈ کے سابق چیف جنرل جیمز میٹس وزیر دفاع مقرر جنرل جیمز کی نیو جرسی میں صدر ڈونالڈ ٹرمپ سے ملاقات

ڈونلڈ ٹرمپ اور جیمز میٹس کے درمیان ریاست نیو جرسی میں ٹرمپ گالف کلب میں اہم ملاقات ہوئی۔۔۔سی این این‘ے مطابق جنرل جیمز میٹس کی ڈونلڈ ٹرمپ کے ساتھ ملاقات اہمیت کی حامل ہے۔ ۔۔جب صحافیوں نے نو منتخب صدر سے پوچھا کہ آیا انہوں نے اپنی حکومت میں جیمز میٹس کو وزیر دفاع کے لیے منتخب کیا ہے تو ان کا کہنا تھا کہ اس حوالے سے جو بھی کہا جائے مگر یہ ایک حقیقی ڈیل ہوگی۔۔۔ جنرل جیمس میٹس کی کابینہ میں شمولیت کو سپر ہاکس  کی ٹیم میں اضافہ قراردیا جارہا ہے۔۔۔۔اس سے پہلے ڈونلڈ ٹرمپ ریٹائر لیفٹنٹ جنرل مائیکل فلن کو قومی سلامتی کا مشیر، الاباما سے سینٹر جیف سیشنز کو اٹارنی جنرل اور کنساس سے منتخب رکن ایوان نمائندگان مائک پوم پیو کو ڈائرکٹر سی آئی اے مقرر کرچکے ہیں۔۔۔۔۔اخبار واشنگٹن پوسٹ کے مطابق سینٹرل کمانڈ کے سابق سربراہ جنرل جیمز میٹس کئی بار ایران پر پابندیوں کا مطالبہ بھی کرچکے ہیں۔ اخبار وال اسٹریٹ جرنل نے  کہا ہے کہ جنرل میٹس ایران کے متنازع ایٹمی پروگرام پر سمجھوتہ کرنے کےبھی خلاف تھے۔ ۔ سنہ 2005ء میں جنرل جیمز میٹس اپنے اس بیان کی وجہ سے بھی کافی مشہور ہوئے تھے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ مذاق میں بھی افغان طالبان جنگجوؤں پر فائرنگ کی جاسکتی ہے

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.