گرفتاری کا خدشہ

معروف اسلامی مفکراور داعی اسلام ڈاکٹرذاکرنائیک کے والد ڈاکٹر کریم گزشتہ روز 88برس کی عمر میں دل کادورہ پڑنے سےئ انتقال کرگئے،ان کی نمازجنازہ ممبئی میں ادا کی، گرفتاری کے خدشے کے پیش نظر ڈاکٹر ذاکرنائیک نے نمازجنازہ میں شرکت نہیں کی،ڈھاکا میں ہونے والےریسٹورنٹ حملے میں ملوث ہونے کے بگلہ دیشی الزام اور بھارت سرکاکی جانب سے مختلف مقدمات کا شکار ہوکر زیر عتاب آنے کے بعد سے ڈاکٹر ذاکرنائیک نے ملائیشیامیں سکونت اختیار کررکھی ہے،ممبئی پولیس حکام کے مطابق معروف اسلامی اسکالرکی والد کے جنازےمیں شرکت کے امکان کے پیش نطر گزشتہ روزپولیس اور مختلف ایجنسیوں کے اہلکاروں کوہائی الرٹ رکھا گیاتھا،بھارتی میڈیا کا کہنا ہے کہ حکومت غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث ہونے ،متنازع تقاریراور دیگر الزامات کے تحت نائیک اور ان کی تنظیم پر پابندی لگانے کا فیصلہ کرچکی ہے ،اس سلسلےمیں حتمی ڈرافٹ کی تیاری کا کام آخری مراحل میں ہے،ڈاکٹر ذاکرنائیک عالمی سطح پرنامورمبلغ اسلام احمد دیدات کےشاگردہیں جن کےہاتھ پر لاکھوں لوگوں نے اسلام قبول کیا کے، بھارت  میں ڈاکٹر ذاکرنائیک  کی سرگرمیوں نے جہاں بہت سے غیرمسلمو کو مشرف بہ اسلام کیا وہیں انتہا پسند ہندو حلقوں میں تشویش کی لہربھی دوڑا دی

مشہور مفکر ڈاکٹر ذاکر نائیک گرفتاری کے خدشے کے سبب  والد کےجنازے میں شرکت نہیں کرسکے،ممبئی پولیس کی تیاریاں دھری کی دھری رہ گئیں،بھارتی حکومت نے پابندی کا ڈرافٹ تیار کرلیا

 

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.