مشرقی ترکی ميں حملہ، تين فوجی اور ايک شہری ہلاک

انقرہ حکومت نے اس حملے کا الزام کردستان ورکرز پارٹی پر عائد کيا ہے۔ يہ امر اہم ہے کہ کردستان ورکرز پارٹی اور انقرہ حکومت کے مابين جنگ بندی کا ايک معاہدہ گزشتہ برس ناکام ہو گيا تھا جس کے بعد سے رياستی فورسز اور کرد مليشياؤں کے مابين جھڑپيں ہوتی رہتی ہيں۔ ترک حکومت نے بھی کرد سياستدانوں کے خلاف کارروائياں تيز تر کر دی ہيں۔ترکی  کے مشرقی صوبے وان میں محافظوں کی گاڑی پر حملہ کیا گیا جس کے نتیجے میں تین اہلکاروں سمیت ایک شیہری ہلاک ہو گیا ہے،واقعہ میں دو افراد کے زخمی ہونے کی بھی اطلاع  ہے

 

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.