ڈونلڈ ٹرمپ کا مسلمانوں کی مشاورتی تنظیم بنانے کا فیصلہ

امریکہ کے منتخب ہونے والے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بارے میں یہ تاثر پایا جاتا ہے کہ وہ مسلمانوں کے خلاف ہیں، ان کے کچھ بیانات کو مسلم مخالف بیانات کے طور پر شہرت ملی، تاہم کامیابی کے بعد ان کی مسلمانوں کے حوالے سے ترجیحات بتدریج سامنے آرہی ہیں۔ڈونلڈ ٹرمپ نے مسلمانوں کی ایک ملک گیر تنظیم بنانے کا فیصلہ کیا ہے جوکہ امریکہ میں رہنے والے چالیس لاکھ سے زائد مسلمانوں سے رابطے کرے گی، اس سلسلے میں ساجد تارڑ کو ٹاسک سونپا گیا ہے جوکہ امریکہ کی مختلف ریاستوں میں رہنے والے سرکردہ مسلمانوں سے رابطے کررہے ہیں، اور انہیں اعتماد میں لے رہے ہیں۔وائٹ ہاؤس میں حکومت ری پبلکن کی ہو یا ڈیموکریٹس کی،امریکہ میں رہنے والے مسلمانوں کو نظراندازکرنا مشکل ہے۔ امریکہ کے نئے صدر کی طرف سے مسلمانوں کو اعتماد میں لینے اور مشاورتی عمل میں شریک کرنے سے جہاں امریکہ کی سلامتی یقینی ہوگی، وہیں مسلمانوں میں پائے جانے والے خدشات بھی دور ہوں گے اور وہ پہلے سے زیادہ بہتر طریقے سے اپنے ملک کی خدمت کرسکیں گے

 

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.