?ڈونالڈ ٹرمپ کے صدر منتخب ہونے کے بعد پاکستان کہاں کھڑا ہے

ٹرمپ کے بعد کی دنیا کیسی ہو گی ،یہ دیکھنا ابھی باقی ہے کیونکہ ماہرین نے ٹرمپ کے امریکا کا صدر منتخب ہونے کو ایک نائن الیون قرار دیا ہےتجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ امریکا Asia Pivot کی پالیسی پر یقین رکھتا ہے، جس کے تحت وہ چین کو خطے میں کمزور کرنا چاہتا ہے۔ واشنگٹن نے اس مقصد کے لیے بھارت، آسٹریلیا اور جاپان کے ساتھ مشترکہ فوجی مشقیں کی ہیں۔ اس کے علاوہ وہ ویتنام اور خطے کے دوسرے ممالک کو بھی چین کے خلاف استعمال کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔۔ کیونکہ پاکستان چین کا قریبی اتحادی ہے اور بیجنگ یہاں اربوں ڈالرز کی سرمایہ کاری کر رہا ہے۔ آنے والی امریکی انتظامیہ پاکستان پر دباو ڈالے گی کہ اسلام آباد چین سے زیادہ تعلقات نہ بڑھائے۔۔۔۔۔نو منتخب امریکی صدر ڈونالڈ  ٹرمپ ہر معاملے میں منہ پھٹ ہیں۔ لہذا قوی امکان ہے کہ وہ ایسی پالیسی اپنائیں، جس سے پاکستان اور امریکا کے درمیان فاصلے مزید بڑھ جائیں۔ ممکنہ طور پر وہ پاکستان کے خلاف سخت موقف اختیار کر سکتے ہیں اور پاکستان کے ساتھ تعاون کرنے کے لئے کئی شرائط عائد کر سکتے ہیں۔ تجزیہ کاروں کا یہ بھی کہنا ہے کہ ڈونالڈ ٹرمپ امریکا کے مالیاتی امور کے حوالے سے کافی فکر مند ہیں۔ جو ملک بھی امریکا کے لئے پیسہ کمانے کا باعث بنے گا، ٹرمپ اس کے دوست ہوں گے۔ ۔۔۔اس بات کا امکان ہے کہ ٹرمپ پاکستان کی امداد روک سکتے ہیں۔ اس کے علاوہ دہشت گردی کے مسئلے پر بھی وہ پاکستان کے خلاف سخت موقف اختیار کر سکتے ہیں۔ کیونکہ بھارت امریکی سرمایہ کاروں کو سرمایہ کاری کے مواقع فراہم کر کے امریکی معیشت کو سہارا دے سکتا ہے، اس لئے ٹرمپ کا فطری رجحان نئی دہلی کی طرف ہوگا۔ ٹرمپ کی پالیسی کی وجہ سے خطے میں نئی سیاسی صف بندیوں میں تیزی آسکتی ہے  ۔

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.