ڈاکٹرعمران فاروق قتل کیس، ملزم خالد شمیم نے اعترافی بیان جمع کرادیا

949803-drimranfarooqphotofile-1441242813

مجسٹریت کو دیئے گئے اعترافی بیان میں ملزم خالد شمیم نے کہا ہے کہ

سولہ ستمبر کو عمران فاروق کو قتل کرنے کے بعد کاشف نے معظم کے فون پربتایا ماموں کی صبح ہو گئی ہے ٹی وی لگا کر تصدیق کر لی جائے۔ قتل کرنے کے بعد افتخارحسین نے کراچی پہنچ کر پچیس ہزار پاؤنڈ لفافے میں مجھے دیئے اور مجھے بتایا گیا جس کام کی نشاندہی الطاف حسین نے کی اس کام کے پیسے ہیں۔ افتخار حسین اور معظم کے پیسوں سے ویزہ اخراجات پورے کیئے گئے۔ چھ جنوری کو ہم چمن کے راستے افغانستان پہنچ گئے۔ پانچ سال افغانستان رہنے کے بعد میں نے اور محسن نے ملک واپسی کا ارادہ کیا۔ دوہزار پانچ میں محمد انورکی موجودگی میں عمران فاروق سے فون پر رابطہ کیا۔ دوسری جانب ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس میں گرفتار ملزمان خالد شمیم، معظم علی خان اور محسن علی سید پر چوبیس نومبر کو اڈیالہ جیل راولپنڈی میں فرد جرم عائد کی جائے گی۔

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.