سیالکوٹ میں خواجہ سراؤں پر تشدد، 5 افراد گرفتار

download-3

سیالکوٹ سے گرفتار ہونے والے 5 افراد پر الزام تھا کہ انہوں نے خواجہ سراؤں کا ریپ کیا جبکہ جنسی تعلقات قائم کرنے سے انکار پر لوٹ مار کے ساتھ ساتھ ان کو تشدد کا بھی نشانہ بنایا۔ اس سے پہلے پولیس کی جانب سے خواجہ سرا کو برہنہ کرکے چمڑے کے بیلٹ سے مارنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر شیئر کی، جو جلد ہی وائرل ہوگئی۔ پولیس نے ویڈیو کی مدد سے مشتبہ افراد کو ڈھونڈا اور اس بات کا دعویٰ کیا کہ یہ واقعہ پکی کوٹلی گاؤں میں 10 نومبر کو خواجہ سراؤں کے گرو ریاض الیاس عظمو کے گھر کے صحن میں پیش آیا۔ متاثرہ خواجہ سراؤں کی جانب سے میڈیا کو بتایا گیا کہ پولیس والے کی رہنمائی میں ڈنڈوں اور بیلٹس سے لیس 20 مشتبہ افراد ان کے گھر میں داخل ہوئے اور تشدد شروع کردیا۔ خواجہ سراؤں کی جانب سے جنسی روابط قائم کرنے سے انکار پر ان افراد نے کئی خواجہ سراؤں کے سر مونڈ دیئے اور سگریٹ سے جلایا۔ متاثرہ افراد نے پولیس کو مزید بتایا کہ مشتبہ افراد نے ان کے ساتھ غیرانسانی سلوک کیا اور اس منظر کو فلماتے رہے۔

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.