وزیراعظم کو سولوفلائٹ کی گنجائش نہیں

سماعت کے دوران جسٹس ثاقب نے ریمارکس دیئے کہ آئین میں وزیراعظم کی سولو فلائٹ کی کوئی گنجائش نہیں۔ وفاقی حکومت کی نظر ثانی کی اپیل سپریم کورٹ میں ہوئی جس کے بعد عدالت عظمیٰ نے اسے خارج کردی۔ دوران سماعت جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیئے کہ رولز کبھی بھی آئین سے بالا تر نہیں ہوسکتے، آئین میں کہیں بھی وزیراعظم کی سولو فلائٹ کی گنجائش نہیں۔ حکومتی وکیل نے عدالت کے رو برو دلائل دیئے کہ حکومتی امور کے لئے مضبوط وزیراعظم کی ضرورت ہوتی ہے جس پر عدالت نے استفسار کیا کہ کیا وزیراعظم کابینہ کی منظوری کے بغیر جو چاہے کرسکتا ہے؟کہیں نہیں لکھا کہ وزیراعظم یا کوئی وزیر تنہا ہی وفاقی حکومت ہے لہذا وزیراعظم کابینہ کو بائی پاس نہیں کرسکتے۔عدالت عظمی نے ٹیکس استثنی اور لیوی ٹیکس کو وفاقی حکومت کا اختیار قرار دیتے ہوئے نظر ثانی اپیل خارج کردی۔

سپریم کورٹ نے کابینہ سے مشاورت کے بغیر وزیراعظم کے فیصلوں سے متعلق فیصلے کے خلاف نظر ثانی کی اپیل خارج کردی ہے۔

وزیراعظم کا وفاقی کابینہ کو بائی پاس کرنے کے اختیار کا معاملہ۔۔سپریم کورٹ نے وفاق کی نظر ثانی کی درخواست خارج کردی۔۔۔آئین میں وزیراعظم کو سولوفلائٹ کی گنجائش نہیں،وزیراعظم کابینہ کو بائی پاس نہیں کرسکتے،جسٹس ثاقب نثارکے ریمارکس

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.