خیبر پختونخواہ حکومت کےعدالت جانے پر دکھ ہوا

لاہورمیں میڈیاسےگفتگوکرتےہوئےاحسن اقبال نےکہا کہ سی پیک کے خلاف عدالتی جنگ جرم ہے، صوبائی حکومت ساڑھے تین سال کی ناکامی چھپانے کےلیےایسا کر رہی ہے چین جیسے دوست ملک کو عدالت میں لے جا کر مستقبل کی سرمایہ کاری روکی جا رہی ہے۔ احسن اقبال نے سی پیک کو پاکستان کے لیے آب حیات قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ منصوبہ اگلےدس بیس سال میں پاکستان کوترقی دلائے گا،پیش گوئیاں کرنے والے پنڈتوں کومنہ کی کھانی پڑےگی۔ احسن اقبال نےمزید کہا کہ جب پاناما کیس پرسپریم کورٹ کارروائی کررہی تو کسی کو اس پر دباؤ نہیں ڈالنا چاہئیے، عوام اس بات پر ایمان لے آئے ہیں کہ سیاسی استحکام ملکی ترقی کا ضامن ہے،یہ مرچ مصالحے اور پتلی تماشوں نے پاکستان کو دیگر ملکوں سے پیچھے کردیا۔ قبل ازیں انٹرنیشنل بزنس کانفرنس سےخطاب کرتےہوئےاحسن اقبال نےکہا کہ دوہزار تیرہ میں پاکستان دنیاکاسب سے خطرناک ملک تھا لیکن اب امن وامان کی صورتحال پہلےسےکہیں بہترہے، دوہزارسولہ میں ملکی معیشت کو ترقی پذیر معیشت قرار دیا جا رہا ہے۔ انہوں نےکہا کہ تبدیلی تو آرہی ہے پھر رونا کس چیز کا ہے؟انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ کہا کہ ٹاک شوز دیکھنے سے اجتناب کریں یہ صرف پریشانی بڑھانے کا سبب ہیں۔

وفاقی وزیرمنصوبہ بندی وترقی احسن اقبال کاکہناہے کہ سی پیک پر خیبر پختونخواہ حکومت کے عدالت جانے پر دکھ ہوا۔عدالتی جنگ سےبیرونی سرمایہ کاری ملک سے نکل جائے گی۔

وفاقی وزیرمنصوبہ بندی وترقی احسن اقبال کاکہناہےکہ سی پیک پر خیبرپختونخواہ حکومت کےعدالت جانےپردکھ ہوا۔ عدالتی جنگ سےبیرونی سرمایہ کاری ملک سےنکل جائے گی۔

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.