نیپرا نےحکومت کے 2018 تک لوڈشیڈنگ ختم کرنےکے دعووں کی نفی کر دی

نیشل الیکٹرک پاور کمپنی اتھارٹی (نیپرا) نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت کی جانب سے 2018 تک لوڈ شیڈنگ ختم کرنے کے دعووں کی نفی کرتے ہوئے کہا ہے کہ بیشر ٹرانسمیشن لائن اور گرڈ سسٹم کی بہتری کے پروجیکٹس مقررہ شیڈول سے بہت پیچھے چل رہے ہیں۔
نیپرا کی جانب سے پیش کی جانے والی خصوصی ’وزٹ رپورٹ‘ میں کہا گیا کہ نیشنل ٹرانسمیشن اینڈ ڈسپیچ کمپنی (این ٹی ڈی سی) کے کئی ترقیاتی منصوبے تاخیر کا شکار ہیں اور منصوبوں کی تکمیل میں تاخیر سے قومی خزانے کو بھی نقصان پہنچ رہا ہے۔یہ رپورٹ این ٹی ڈی سی کے پاور پروجیکٹس ، ٹرانسفارمرز اور ٹرانسمیشن لائنز کے لوڈنگ پوزیشن، موجودہ نظام میں توسیع کے منصوبوں اور دیگر مسائل کے جائزوں پر مبنی ہے۔رپورٹ کو نومبر 2015 میں حتمی شکل دی گئی تھی اور منظر عام پر لانے سے قبل اسے این ٹی ڈی سی کے مشاورتی عمل سے ایک سال تک گزارا جاتا رہا۔نیپرا کے مطابق بجلی کی ترسیل کا نظام پاور پلانٹس کی کمرشل آپریشن سے کم سے کم 6 ماہ پہلے تیا رہونا چاہیے تاکہ آزمائشی مرحلے میں اس کی بلا تعطل فراہمی اور معاشی فوائد کا جائزہ لیا جاسکے لیکن بڑی ٹرانسمیشن لائن اور ٹرانسفورمیشن سسٹم پروجیکٹس 6 سے تین سال کی تاخیر کا شکار ہیں۔

You might also like More from author

Leave A Reply

Your email address will not be published.